Premium Content

چیٹ بوٹ کی ایک غلطی گوگل کو لے ڈوبی کمپنی کو 100 ارب ڈالر کا نقصان

Print Friendly, PDF & Email

تحریر: رمضان شیخ

دنیا کے مشہور ترین سرچ انجن گوگل کو بڑا نقصان اٹھانا پڑ گیا۔ چیٹ بوٹ سے ہونے والی ایک غلطی نے اس کے 100 ارب ڈالر ڈبودیے۔
ہوا یوں کہ گوگل کی جانب سے چیٹ بوٹ “بارڈ” کی ایک تعارفی ویڈیو جاری کی۔ اس ویڈیو میں بتایا گیا تھا کہ ہمارے نظامِ شمسی سے باہر کسی سیارے کی سب سے پہلے کس دوربین یا سیٹیلائٹ سے تصویر لی گئی تھی۔ گوگل کی ویڈیو میں دکھایا گیا کہ ایک شخص بارڈ پر کچھ ٹائپ کرتا ہے کہ جیم ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ سے کیا نیا دریافت کیا گیا ہے؟کیونکہ وہ اپنےبیٹے کو یہ انفارمیشن دینا چاہتا ہے۔
اس کے بعد بارڈ جواب دیتا ہے کہ جیم ویب ٹیلی اسکوپ کے ذریعے سب سے پہلے نظامِ شمسی سے باہر کسی سیارے کی تصویر لی گئی تھی۔ لیکن یہ معلومات درست معلومات نہیں ہیں۔کیونکہ یورپین سدرن آبزرویٹری کے ویری لارج ٹیلی اسکوپ (وی ایل ٹی) کے ذریعے 2004ءمیں سب سے پہلے نظامِ شمسی سے باہر کسی سیارے کی تصویر لی گئی تھی۔ اس کی تصدیق ناسا نے بھی کی تھی۔
یہ ویڈیو جاری ہوتے ہی صارفین نے کہنا شروع کر دیا کہ چیٹ بوٹ ’بارڈ‘ کی معلومات ہی درست نہیں ہیں۔ صارفین کے اس ردعمل کاگوگل کو شدید مالی نقصان اٹھانا پڑا۔ اورریگولیٹر ٹریڈنگ میں اس کے شیئرز 9 فیصد تک گر گئے۔
انٹرنیٹ پر معلومات کی تلاش کے لیے گوگل کو حالیہ تاریخ میں پہلی مرتبہ مسابقت کا سامنا ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ گوگل کو چیٹ بوٹ سے مائیکروسافٹ کے مقابلے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔
اس لئےگوگل نے دنیا میں تیزی سے مقبول ہونے والے اوپن اے آئی کے چیٹ بوٹ کے مقابلے کے لیے ابھی 6 فروری کو ہی بارڈ متعارف کرایا تھا۔
بارڈ کا اعلان کرتے ہوئے گوگل کے باس سندر پچائی کہا تھا کہ ان دنوں جن نئی چیزوں پر کام کیا جا رہا ہے۔ ان میں مصنوعی ذہانت سب سے زیادہ اہم ہے۔ بیماریوں کی دریافت سے لے کر ڈاکٹروں تک، اسے لوگوں کو ان کی اپنی زبان میں معلومات فراہم کرنے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔
سندر پچائی نے کہا کہ وہ گذشتہ دو سالوں سے لینگویج ماڈل فار ڈائیلاگ ایپلی کیشن (ایل اے ایم ڈی اے) کے نام سے ایک نئی مصنوعی سروس پر کام کر رہے ہیں۔
سندر پچائی نے بتایا، “ہم اس نئی اے آئی ٹیکنالوجی کو بارڈ کہہ رہے ہیں۔ چیٹ جی پی ٹی ایک ایسا پروگرام ہے جسے مصنوعی انٹیلی جنس سے چلایا جاتا ہے۔ اس پروگرام کی مدد سے کسی بھی معاملے کا جواب حاصل کیا جا سکتا ہے۔
مائیکروسافٹ کی جانب سے چیٹ جی پی ٹی کیلئے اوپن اے آئی مالی معاونت کی جاتی رہی ہے۔ چیٹ جی پی ٹی ابھی نومبر 2022 میں لانچ ہوئی لیکن اس نے دیکھتے ہی دیکھتےپوری دنیا کو اپنا گرویدہ بنا لیا ہے۔ چیٹ بوٹس کا حتمی مقصد انٹرنیٹ سرچ کو مکمل طور پر تبدیل کرنا ہے۔
چیٹ بوٹس کا حتمی مقصد انٹرنیٹ سرچ کو طور پر تبدیل کرنا ہے۔ اس وقت اگر آپ سرچ انجن گوگل میں کچھ تلاش کرتے ہیں۔ تو آپ کو لاکھوں جوابات انٹرنیٹ پیجز کی صورت میں ملتے ہیں۔ لیکن چیٹ بوٹ آپ کی تلاش کا درست جواب دیتا ہے۔
گوگل کے باس سندر پچائی نے بھی کہا ہے کہ لوگ اب گوگل پر بہت مختلف طریقے سے سوالات پوچھ رہے ہیں۔
ان کا کہنا ہے کہ ’پہلے لوگ گوگل پر سرچ کرتے تھے کہ پیانو میں کتنی چابیاں ہیں لیکن اب لوگ سرچ کرتے ہیں کہ گٹار سیکھنا مشکل ہے یا پیانو؟؟
اب اس سوال کا فوری حقائق پر مبنی جواب دینا ممکن نہیں۔
چیٹ بوٹس ایسے ٹیڑھے سوالات کے جوابات دینے میں موثر ہیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos