Premium Content

فلیونائیڈ سے بھرپور غذائیں ذیا بیطس کے خطرات کم کرتی ہیں، تحقیق

Print Friendly, PDF & Email

ایک تحقیق کے مطابق فلیونائیڈ سے بھرپور غذائیں ٹائپ 2 ذیا بیطس کے خطرات کو 28 فی صد تک کم کر سکتی ہیں۔

ٹائپ 2 ذیا بیطس عالمی سطح پر عوامی صحت کے لیے بڑا خطرہ قرار دیا جارہا ہے۔ اس وقت 41 کروڑ 50 لاکھ سے زائد افراد اس مرض میں مبتلا ہیں جبکہ دنیا بھرمیں 40 لاکھ اموات اس بیماری کے سبب واقع ہوتی ہیں۔

حال ہی میں کی جانے والی تحقیق میں سائنس دانوں نے فلیونائیڈ سے بھرپور غذاؤں اور ٹائپ 2 ذیا بیطس کے وقوع پذیر ہونے کے درمیان تعلق کا مطالعہ کیا۔مطالعے میں یو کے بائیو بینک سے تعلق رکھنے والے 1 لاکھ 13 ہزار 97 افراد کا معائنہ کیا گیا۔

تحقیق میں محققین نے شرکاء سے ان کی دو یا اس سے زیادہ عرصے کی غذا کے متعلق دریافت کیا اور ڈیٹا بیس کا استعمال کرتے ہوئے جاننے کی کوشش کی کہ یہ افراد کتنی مقدار میں فلیونائیڈ کھاتے ہیں۔

نتائج میں یہ بات سامنے آئی کہ تحقیق میں شریک افراد نے روزانہ اوسطاً 805.7 ملی گرام فلیورائیڈ کی کھائی تھی۔

تحقیق کے 12 سالہ دورانیے میں ٹائپ 2 ذیا بیطس کے 2628 نئے کیس سامنے آئے۔نتائج میں دیکھا گیا کہ وہ افراد جنہوں نے روزانہ فلیونائیڈ سے بھرپور غذاؤں کی چھ سرونگز لیں تھیں ان کے صرف ایک سرونگ کھانے والوں کے مقابلے میں ذیا بیطس کے خطرات 28 فی صد کم تھے۔

Don’t forget to Subscribe our Youtube Channel & Press Bell Icon.

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos