Premium Content

حکومت مخالف جماعتوں کا آئین بحالی کیلئے ملک گیر مہم چلانے کا فیصلہ

Print Friendly, PDF & Email

اسلام آباد: حکومت مخالف جماعتوں کے اتحاد کے اہم اجلاس میں آئین کی بحالی کیلئے ملک گیر مہم چلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

محمود خان کی زیر صدارت 6جماعتی اتحاد کے اجلاس میں کراچی اورفیصل آباد میں جلسوں کے انعقاد کیلئے انتظامیہ کے رویے کے خلاف عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے چیئرمین اور حکومت مخالف 6جماعتوں کے اتحاد تحریک تحفظ آئین پاکستان (ٹی ٹی اے پی)کے صدر محمود خان اچکزئی کی زیر صدارت ہفتہ کو اہم اجلاس ہوا۔

اجلاس میں قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور پاکستان تحریک انصاف کے جنرل سیکریٹری عمر ایوب خان اور پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما اسد قیصر شریک ہوئے۔ اجلاس میں سنی اتحاد کونسل کے سربراہ صاحبزادہ حامد رضا، بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی مینگل)کے راہنما ساجد ترین اور ثنااللہ بلوچ بھی موجود تھے۔اجلاس میں مجلس وحدت مسلمین (ایم ڈبلیو ایم)کے اسد شیرازی اور ترجمان تحریک تحفظ آئین پاکستان اخونزادہ حسین یوسفزئی بھی شریک ہوئے۔

اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال سے متعلق اہم فیصلوں کی منظوری دی گئی۔اپوزیشن اتحاد نے تحریک کو آگے بڑھانے اور حقیقی آزادی کے حصول کے لئےآئندہ کے لائحہ عمل پر غور کیا۔

اپوزیشن اتحاد نے کہا کہ عوامی اجتماعات کرنا ہمارا آئینی قانونی اور جمہوری حق ہے، جلسے ہر صورت کئے جائیں گے، اس وقت ملک میں جمہوریت ختم ہو چکی اور آئین کے ساتھ کھلواڑ ہو رہا ہے، ہماری تحریک آئین کی بحالی تک جاری رہے گی۔

تحفظ آئین پاکستان کی قیادت نے 7مئی کی پریس کانفرنس غیر آئینی، غیر قانونی اور اختیارات سے تجاوز قرار دیتے ہوئے مسترد کر دی۔

Don’t forget to Subscribe our Youtube Channel & Press Bell Icon.

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos