Premium Content

Add

ٹربیونلز نے پی ٹی آئی کے متعدد اراکین  کے کاغذت نامزدگی منظور کر لیے

Print Friendly, PDF & Email

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنماؤں شاہ محمود قریشی، عمر ایوب، حلیم عادل شیخ کے کاغذات نامزدگی ایپلٹ ٹربیونلز نے منظور کر لیے۔

سندھ کے شہر عمرکوٹ کے حلقہ این اے 214 کے لیے ٹریبونل نے پی ٹی آئی سیاستدان کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے جب کہ ان کے بیٹے زین قریشی کے کاغذات بھی اسی حلقے سے الیکشن لڑنے کے لیے منظور کر لیے گئے۔

ایبٹ آباد میں پی ٹی آئی رہنما عمر ایوب خان کو ہری پور کے حلقہ این اے 18 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

ٹربیونل نے پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کے بابر نواز کو این اے 18 سے الیکشن لڑنے کی بھی اجازت دے دی۔ ایوب اور نواز دونوں نے ایک دوسرے کے خلاف اعتراضات واپس لے لیے جس کے بعد ان کے کاغذات منظور کر لیے گئے۔

سندھ میں پی ٹی آئی کے رہنما حلیم عادل شیخ کو بھی این اے 238 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ٹربیونل نے ان کی اپیل کی سماعت کے بعد این اے 241 سے پی ٹی آئی کے ایک اور امیدوار ارسلان خالد کے کاغذات بھی منظور کر لیے۔

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے امیدوار مرزا اختیار بیگ کو دوہری شہریت کے باعث حلقہ این اے 241 سے الیکشن لڑنے کی مشروط اجازت دے دی گئی ہے۔

ٹربیونل کے جج عدنان الکریم میمن نے بیگ سے کہا کہ اگر اس نے اپنی دوہری شہریت چھوڑ دی ہے تو وہ حلف نامہ جمع کرائیں۔

ٹربیونل نے کہا کہ اگر حلف نامہ جھوٹا پایا گیا تو الیکشن کے بعد جیت کو کالعدم قرار دے دیا جائے گا۔

نوشہرہ سے پی ٹی آئی کے امیدوار کے کاغذات نامزدگی بھی الیکشن لڑنے کے لیے کلیئر ہوگئے۔ ٹریبونل نے پی ٹی آئی کے امیدوار میاں محمد عمر کوپی کے 88 (نوشہرہ) سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔

پشاور میں الیکشن ٹربیونل کے جج جسٹس شکیل احمد نے این اے 22 اور پی کے 59 (مردان) کے لیے عاطف خان کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے۔ راولپنڈی میں اپیلٹ ٹربیونل نے آر او کا فیصلہ مسترد کرتے ہوئے راجہ بشارت کو این اے 55 اور پی پی 15 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔

زلفی بخاری کی اپیل ٹربیونل نے منظور کرتے ہوئے انہیں اٹک کے حلقہ این اے 50 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔ پی پی 15 سے پی ٹی آئی کے سابق ایم پی اے کو بھی الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی گئی۔

Don’t forget to Subscribe our Youtube Channel & Press Bell Icon.

اپیلٹ ٹربیونل کے جج اسجد جاوید نے آر او کے فیصلے کے خلاف پی ٹی آئی کے وکیل نعیم پنجوتھا کی درخواست کی سماعت کی اور ریٹرننگ افسر کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا۔ پنجوتھا قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 82 (سرگودھا) اور پی پی 71 اور پی پی 80 سے الیکشن لڑیں گے۔

تاہم پی پی 19 سے پی ٹی آئی کے سابق ایم پی اے عارف عباسی کی اپیل الیکشن ٹربیونل نے مسترد کردی۔ اپیلٹ کورٹ نے کہا کہ عارف عباسی اشتہاری مجرم ہے اور اس نے عدالت کے سامنے سرنڈر نہیں کیا۔

دریں اثناء فواد چوہدری کے کاغذات نامزدگی اپیلٹ ٹربیونل نے جہلم کے دو قومی اسمبلی کے حلقوں سے منظور کر لیے۔ لاہور ہائی کورٹ ملتان بینچ نے جمعہ کو سابق گورنر پنجاب ملک غلام مصطفی کھر کی این اے 182 کوٹ ادو سے الیکشن لڑنے کی اپیل منظور کر لی۔

تفصیلات کے مطابق فاضل جج جسٹس علی ضیاء باجوہ نے مصطفی کھر کی آئندہ الیکشن لڑنے کی اپیل منظور کرلی۔ غلام مصطفی کھر کی اہلیہ کی جانب سے دائر کی گئی ایک اور اپیل کو بھی ٹربیونل کے جج نے انتخابات میں حصہ لینے کے لیے منظور کر لیا۔

علاوہ ازیں آزاد امیدوار عمران شوکت کی قومی اور صوبائی حلقوں سے الیکشن لڑنے کی اپیل منظور کرلی گئی۔ انہیں این اے 152 اور پی پی 221 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دی گئی۔جسٹس محمد سرفراز ڈوگر نے ان کی اپیل منظور کر لی۔

ضلع لیہ کے کہروڑلعل عیسان سے تعلق رکھنے والے ایک اور امیدوار چوہدری اختر مقبول، جن کے کاغذات نامزدگی پہلے مسترد کیے گئے تھے، ان کی اپیل بھی منظور کر لی گئی۔

اس سے قبل جمعرات کو شیخ رشید احمد، اختر مینگل اور فردوس شمیم ​​نقوی سمیت کئی سینئر سیاسی رہنماؤں نے الیکشن ٹربیونلز سے ریلیف حاصل کیا ۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

AD-1