Premium Content

Add

گرپتونت قتل سازش: امریکہ نے بھارت سے تحقیقات کے نتائج شیئر کرنے کا مطالبہ کر دیا

Print Friendly, PDF & Email

اسلام آباد – کینیڈا کے بعد اب بھارت کے ساتھ امریکہ کے سفارتی تعلقات کشیدہ ہوتے جا رہے ہیں کیونکہ واشنگٹن انتظامیہ نے نئی دہلی حکومت سے کہا ہے کہ وہ امریکہ میں مقیم سکھ رہنما کو قتل کرنے کی سازش کے الزامات کے بارے میں معلومات اور تحقیقات فوری طور پر شیئر کرے جو کہ ایک امریکی شہری بھی ہے۔

نیویارک میں مقیم گرپتونت سنگھ پنوں خالصتان تحریک کے رہنما ہیں جو بھارت سے علیحدگی چاہتے ہیں۔ گروپتونت سنگھ پنوں عالمی سطح پر خالصتان ریاست کے حق میں سکھ برادری کے لیے امریکہ اور کینیڈا میں ریفرنڈم کرانے کے لیے بہت سرگرم ہیں ۔

 امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے پہلی بار گروپتونت سنگھ پنوں کے قتل کی سازش میں بھارتی خفیہ ادارے ’را‘ کے ملوث ہونے کا انکشاف کیا ہے جسے امریکی انٹیلی جنس نے ناکام بنا دیا تھا۔ امریکی ایف بی آئی کے انکشافات نے کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو کے اس بیان کی تصدیق کر دی ہے جو انہوں نے ہردیپ سنگھ نجار کے قتل پر کینیڈین پارلیمنٹ میں دیا تھا جسے اس سال جولائی میں کرائے کے قاتل کے ہاتھوں دن دیہاڑے قتل کرا دیا گیا تھا۔

Don’t forget to Subscribe our Youtube Channel & Press Bell Icon.

 امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے انکشاف کیا ہے کہ بھارتی سینٹرل ریزرو پولیس کا ایک اہلکار بھی گروپتونت سنگھ پنوں کے قتل کی سازش میں ملوث ہے۔ امریکی انٹیلی جنس رپورٹ میں مزید انکشاف کیا گیا ہے کہ را کو مئی 2023 میں خالصتان موومنٹ کے تمام سرگرم رہنماؤں کو ختم کرنے کے خفیہ منصوبے کی بھارتی وزیراعظم سے منظوری ملی تھی۔

عالمی دہشت گردی میں بڑے پیمانے پر بے نقاب ہونے کے بعد اب پہلی بار بھارتی خفیہ ایجنسی را نے امریکہ اور کینیڈا میں اپنی کارروائیاں بند کر دی ہیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

AD-1