Premium Content

Add

مسلح افواج ملک کی ضروریات کے مطابق اپنے نظام کو جدید بنا رہی ہیں: چیف آف آرمی اسٹاف

Print Friendly, PDF & Email

آرمی چیف جنرل سید عاصم منیر نے کہا ہے کہ پاکستان کی مسلح افواج پاکستان کے خلاف پیدا ہونے والے کسی بھی خطرے کا جواب دینے کے لیے ملکی ضروریات کے مطابق اپنے نظام کو جدید بنا رہی ہیں۔

یہ بات انہوں نے آج سونمیانی میں مشق البیضا  2024 تھری کے دوران مختلف فضائی دفاعی ہتھیاروں کے نظام کی فائرنگ کے مشاہدے کے موقع پر افسران اور فوجیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔

آرمی چیف نے آرمی ایئر ڈیفنس سسٹم کے مربوط فائر اور جنگی مشقوں کو دیکھا جس میں ہائی ٹو میڈیم ایئر ڈیفنس ویپن سسٹم ، لو ٹو میڈیم ایئر ڈیفنس سسٹم، شارٹ رینج ایئر ڈیفنس سسٹم اور ایکس ٹینڈڈ شارٹ رینج ایئر ڈیفنس سسٹم شامل ہیں۔

پاکستان کی فضائی سرحدوں کے فضائی دفاع کو بڑھانے کے لیے ایک تاریخی کامیابی اور سنگ میل کے طور پر، حمادسسٹم پہلی بار فائر کرنے کے لیے دوسرے تہہ دار ہتھیاروں کے نظام کے ساتھ ہدف کو کامیابی سے نشانہ بنانے میں کامیاب رہا جن کا مشق کے دوران تجربہ کیا گیا۔

Don’t forget to Subscribe our Youtube Channel & Press Bell Icon.

جنرل سید عاصم منیر نے کور آف آرمی ایئر ڈیفنس کی درستگی اور آپریشنل تیاری کے ساتھ اہداف کو حاصل کرنے کی شاندار کامیابی کو سراہا۔

کور کمانڈر کراچی، کمانڈر آرمی ایئر ڈیفنس، انسپکٹر جنرل ٹریننگ اینڈ ایویلیوایشن اور انسپکٹر جنرل آرمز نے بھی مشق کا مشاہدہ کیا۔

قبل ازیں آرمی چیف نے آرمی ایئر ڈیفنس سینٹر کا دورہ کیا۔

انہوں نے یادگار شہدا پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور مسلح افواج کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کیا۔

آرمی چیف نے لیفٹیننٹ جنرل محمد ظفر اقبال کو آرمی ایئر ڈیفنس کور کا کرنل کمانڈنٹ بھی لگایا۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

AD-1