Premium Content

کاپی، پیسٹ کے موجد  لیری ٹیس لر کی برسی

Print Friendly, PDF & Email

آج “کاپی ، پیسٹ” کے موجد  لیری ٹیس لرکی برسی ہے  ان کی” کٹ، کاپی، پیسٹ” اور “فائنڈ  اینڈ ریپ لیس” جیسی اہم جدت کی وجہ سے نہ صرف پرسنل کمپیوٹر کا استعمال  انتہائی آسان ہو گیا بلکہ بے شمار ”تحقیقی مقالے“ بھی وجود میں آئے۔  لیری ٹیس لر 1945 میں نیویارک میں پیدا ہوئے تھے اور سٹین فورڈ  یونیورسٹی سے گریجویشن  کے بعد وہ انٹرفیس ڈیزائن یعنی کمپیوٹر کو صارفین کے استعمال کے لیے آسان تر بنانے کے ماہر بن گئے۔ لیری ٹیس لر کمپیوٹنگ کی دنیا میں ایک آئیکون کے طور پر جانے جاتے تھے۔ انھوں نے 1960 کی دہائی میں جب کمپیوٹرز تک عام لوگوں کی رسائی محدود تھی، سیلی کون ویلی میں کام کرنا شروع کیا۔  لیری ٹیس لر نے 1974 میں بطور کمپیوٹر ریسرچر و سائنسدان  کیلیفورنیا میں واقع ’زیروکس‘ نامی کمپیوٹر ریسرچ کمپنی میں کام کا آغاز کیا۔ اس کمپنی کو بعد ازاں  ’ پالو ایلٹو ریسرچ سینٹر‘ (پارک) نام دیا گیا اور اس کمپنی میں کام کے دوران ہی لیری ٹیس لر نے کمپیوٹر کو آسانی سے استعمال کرنے والے ’کٹ، کاپی پیسٹ‘ کے فیچر متعارف کرائے ۔  جن کی بنیاد ایڈیٹنگ کے انتہائی پرانے طریقے پر تھی ، جس میں لوگ کاغذ کے حصے کاٹ کر ایک جگہ سے دوسری جگہ چپکا دیتے تھے۔‘  اس کمانڈ کو پہلی مرتبہ ایپل کے لیسا نامی کمپیوٹر میں 1983 میں متعارف کروایا گیا۔ اگلے سال ہی پہلا مے کن ٹوش مارکیٹ میں متعارف کروایا گیا تھا۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos