Premium Content

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں امریکہ کی غزہ جنگ بندی معاہدے پر آج ووٹنگ کروانے کی درخواست

Print Friendly, PDF & Email

واشنگٹن: امریکہ نے اسرائیل اور حماس کے درمیان یرغمالیوں کی رہائی کے ساتھ فوری جنگ بندی کے منصوبے کی حمایت کرتے ہوئے اپنی قرارداد کے مسودے پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے ووٹنگ کی درخواست کی ہے۔

سفارتی ذرائع نے بتایا کہ ووٹنگ پیر کو ہونے کا منصوبہ ہے، لیکن ابھی تک جنوبی کوریا کی طرف سے اس کی تصدیق نہیں کی گئی ہے، جس کے پاس جون کے مہینے کے لیے سلامتی کونسل کی صدارت ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق اتوار کو  امریکی وفد کے ترجمان نیٹ ایونز  نےسلامتی کونسل سے ووٹنگ کی طرف بڑھنے کا مطالبہ کیا۔

نیٹ ایونز نے کہا،کونسل کے اراکین کو اس موقع کو ہاتھ سے جانے نہیں دینا چاہیے اور اس معاہدے کی حمایت میں ایک آواز سے بولنا چاہیے۔

امریکہ، جو اسرائیل کا مضبوط حامی ہے ، کو غزہ میں جنگ بندی کا مطالبہ کرنے والی اقوام متحدہ کی متعدد قراردادوں کے مسودے کو روکنے کے لیے بڑے پیمانے پر تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے 31 مئی کو اقوام متحدہ سے الگ جنگ بندی اور یرغمالیوں کی رہائی کے معاہدے کے لیے ایک نیا دباؤ شروع کیا۔

اس تجویز کے تحت اسرائیل غزہ کے آبادی کے مراکز سے نکل جائے گا اور حماس یرغمالیوں کو آزاد کرے گا۔ جنگ بندی ابتدائی چھ ہفتوں تک جاری رہے گی۔

امریکہ اس تجویز کو قبول کرنے کی بنیادی ذمہ داری حماس پر ڈال رہا ہے، خاص طور پر فلسطینی عسکریت پسند گروپ سے مطالبہ کر رہا ہے کہ وہ مسودے کے متن کے تازہ ترین ورژن میں اس دستاویز کو قبول کرے۔

Don’t forget to Subscribe our Youtube Channel & Press Bell Icon.

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos