Premium Content

آئی ایم ایف کا امیر طبقے سے ریلیف واپس لے کر زیادہ ٹیکس وصولی کا مطالبہ

Print Friendly, PDF & Email

 اسلام آباد: آئی ایم ایف نے پاکستان سے امیر طبقے سے ریلیف واپس لے کر ٹیکس وصول کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کو قرضوں کی ری اسٹرکچرنگ نہیں بلکہ ملک چلانے کے لیے سخت اقدامات کی ضرورت ہے۔

غیرملکی نشریاتی ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹالینا جارجیوا نے کہا کہ پاکستان کو قرضوں کی ری اسٹرکچرنگ نہیں بلکہ ملک چلانے کے لیے سخت اقدامات کی ضرورت ہے۔

ایم ڈی آئی ایم ایف نے کہا کہ ہم پاکستان سے ایسے اقدامات کا مطالبہ کررہے ہیں جس کی اشد ضرورت ہے وہ ایک ملک کی طرح چل سکے اور ایسے خطرناک مقام پر نہ پہنچے جہاں اسے دوبارہ سے تعمیر کی ضرورت پڑے۔

مزید پڑھیں: https://republicpolicy.com/imf-ka-aik-martaba-ki-bajaye-mustaqil-tax-aid-krny-ka/

کرسٹالینا جارجیوا نے کہا کہ ہم دو چیزوں پر زور دے رہے ہیں جن میں اول یہ کہ ٹیکس ریونیو، سرکاری شعبہ ہو یا نجی شعبہ، زیادہ کمانے والوں کو زیادہ ٹیکس دینا چاہیے، دوسری چیز یہ ہے کہ صرف ان لوگوں کو ریلیف دیں کہ جن کو اس کی واقعی ضرورت ہے۔

ایم ڈی آئی ایم ایف نے پاکستان میں حالیہ سیلاب سے ہونے والے نقصانات اور ایک تہائی آبادی متاثر ہونے پر دکھ کا اظہار کیا۔ دریں اثنا پاکستان کی جانب سے آئی ایم ایف کی کڑی شرائط پر تیزی سے عمل درآمد کے باعث اسٹاف لیول معاہدہ آئندہ چند روز میں طے پانے کا قومی امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos