Premium Content

ایرانی جوہری تنصیبات پر حملے کے لیے تیاریاں؛ امریکا اور اسرائیل کی مشترکہ فوجی مشقیں

Print Friendly, PDF & Email

تل ابیب / واشنگٹن: ایران کی جوہری تنصیبات کو نشانہ بنانے کے لیے اسرائیل اور امریکا نے مشترکہ فوجی مشقوں کا آغاز کردیا۔

العربیہ نیوز کے مطابق اسرائیل اور امریکا کے طیاروں نے فلسطین کے صحرائے ال نقب میں مشترکہ فوجی مشقوں کا آغاز کردیا جس میں 140 سے زائد لڑاکا طیارے، ایک درجن بحری جہاز اور میزائل لانچرز حصہ لیں گے۔

العربیہ نیوز کے مطابق اخبار ’ٹائمز آف اسرائیل‘ کی رپورٹس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ مشترکہ فوجی مشقوں کے دوران امریکی لڑاکا طیارے صحرائے ال نقب میں اہداف کو 100 ٹن دھماکہ خیز مواد سے نشانہ بنائیں گے۔

مزید پڑھیں: https://republicpolicy.com/mulki-qiyadat-hukam-dy-tu-abhi-iran-k-juhri-marakaz/

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ اہداف ایران کے جوہری تنصیبات کے ماڈل کی طرز پر بنائے گئے ہیں اور ان مشقوں کا مقصد ایران کے جوہری تنصیبات پر بمباری کی مشق کرنا ہے۔

دوسری جانب امریکی سینٹرل کمانڈ نے اسرائیلی فوج کے ساتھ مشترکہ مشقیں شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ان مشقوں کا مقصد دونوں ممالک کی علاقائی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے اپنی اپنی افواج کی جنگی تیاریوں کو بہتر کرنا ہے۔

خیال رہے کہ اسرائیل کئی بار ایران کے جوہری تنصیبات کو نشانہ بنانے کی دھمکی دے چکا ہے اور وزیر دفاع نے یہاں تک بھی کہا تھا کہ یہ کام اکیلے اسرائیل کو کرنا پڑا تو امریکا کا انتظار نہیں کریں گے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos