Premium Content

پاکستان کی ابتر معاشی صورت حال کا ذمہ دار ایک ترقی یافتہ ملک: چین

Print Friendly, PDF & Email

بیجنگ: چین نے قرض فراہم کرنے والے ممالک اور اداروں کی اجارہ داری پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان سمیت دیگر ترقی پذیر ممالک کی ابتر معاشی صورت حال کی ذمہ دار ایک ترقی یافتہ ملک کی مالیاتی پالیسیاں ہیں۔

پاکستان کے قرضے معاف کرنے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر چین کی وزارت خارجہ کی ترجمان ماؤننگ نے جواب دیا کہ چین، پاکستان کی اقتصادی اور مالی تعاون کرتا رہا ہے اور آئندہ بھی اقتصادی استحکام برقرار رکھنے، زندگیوں کو بہتر بنانے اور ترقی کے حصول کے لیے پاکستان کی کوششوں کی حمایت کرتا رہے گا۔

ترجمان ماؤننگ نے امریکا کا نام لیے بغیر کہا کہ لیکن یہ بتانا ضروری ہے کہ ایک مخصوص ترقی یافتہ ملک کی بنیاد پرست مالیاتی پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان اور بہت سے دوسرے ترقی پذیر ممالک قرضوں میں پھنس کر بے پناہ مالی مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: https://republicpolicy.com/china-america-fighter-tiyaro-ka-amna-samna/

ترجمان ماؤننگ نے مزید کہا کہ چین اور پاکستان نے ہر مشکل وقت میں ہمیشہ ایک دوسرے کا ساتھ دیا ہے۔ چین پاکستان کے معاشی اور سماجی استحکام کی کوششوں میں تعمیری کردار ادا کرنے کے لیے تمام فریقین سے مشترکہ کوششوں پر زور دیتا ہے۔

چین کی وزارت خارجہ کی ترجمان نے کہا کہ ترقی پذیر ممالک کے قرضوں کا بڑا حصہ مغربی ممالک کے زیر دست تجارتی قرض دہندگان اور کثیر جہتی مالیاتی اداروں کا ہے جو ان بڑے ممالک کے اشاروں پر چلتے ہیں۔

ترجمان وزارت خارجہ ماؤننگ نے مطالبہ کیا کہ پاکستان کی معاشی صورت حال کو مد نظر رکھتے ہوئے قرض دینے والے مالیاتی ادارے اور ممالک مدد کے لیے آگے بڑھیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos