Premium Content

رابطہ کمیٹی کا طویل اجلاس ختم، بلدیاتی الیکشن لڑنے یا نہ لڑنے کا حتمی فیصلہ نہ ہوسکا

Print Friendly, PDF & Email

متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان نے جعلی حلقہ بندیوں کے اپنے مؤقف سے پیچھے نہ ہٹنے کا فیصلہ کیا ہے اور  بلدیاتی الیکشن کے اعلان پر  وزرا کے استعفوں اور دیگر آپشن پر مشاورت شروع کردی ہے۔

اس حوالے سے بہادرآباد مرکز میں رابطہ کمیٹی کا طویل اجلاس ہوا تاہم اس میں بلدیاتی الیکشن میں حصہ لینے یا نہ لینے کا کوئی حتمی فیصلہ نہیں ہوا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں انتخابات میں حصہ لینے کے حوالے سے حتمی فیصلہ نہیں ہوسکا جس کے بعد  رابطہ کمیٹی کی پریس کانفرنس تاخیر کا شکار ہوگئی ہے۔

مزید پڑھیں: https://republicpolicy.com/mqm-ka-hakumat-chorny-par-ghour-wazirazamzardari/

ایم کیو ایم ترجمان کا کہنا ہےکہ رابطہ کمیٹی نے جعلی حلقہ بندیوں کے مؤقف سے پیچھے نہ ہٹنےکا فیصلہ کیا ہے، جعلی حلقہ بندیوں کے خلاف کسی بھی حد تک جاسکتے ہیں، رابطہ کمیٹی وزرا کے استعفوں اور دیگر آپشن پر مشاورت کر رہی ہے، حلقہ بندیوں کی درستی کیلئے وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے حتمی رابطوں کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: https://republicpolicy.com/mqm-ki-itehad-chorny-ki-dhamki-par-hakumat/

ذرائع کے مطابق رابطہ کمیٹی نےقانونی ٹیم کو بھی مشاورت کیلئے طلب کیا تھا۔ اجلاس سے قبل وفاقی وزیر امین الحق نے میڈیا سےگفتگو کرتے ہوئےکہا کہ وزارت اہم نہیں، شہر اور پارٹی اہم ہے، میں پارٹی کے فیصلوں کا پابند ہوں، خالد مقبول جو فیصلہ کریں گے قبول ہوگا، شہرکے مفاد میں جو بہتر ہوگا وہ کریں گے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Latest Videos